ولی ابن ولی حضور مظہر شعیب الاولیاء علیہ الرحمہ: مختصر تعارف

تحریر: اسلام الدین احمد انجم فیضی
ایڈیٹر: ماہنامہ فیض الرسول جدید براؤں شریف سدھارتھ نگر

حضور مظہر شعیب الاولیاءشیخ طریقت عارف حق صوفی باصفا حضرت مولانا الحاج الشاہ محمد صدیق احمد صاحب قبلہ قادری چشتی یارعلوی سابق سجادہ نشین خانقاہ یارعلویہ وناظم اعلی

دارالعلوم اہلسنت فیض الرسول براؤں شریف کی ولادت باسعادت حضور شیخ المشائخ شعیب الاولیا سیدنا محمد یار علی صاحب قبلہ علیہ الرحمہ کے گھر سن1916/عیسوی میں ہوئی. آپ علوی النسب یعنی حضرت محمد بن حنیف ابن سیدنا مولائے کائنات حضرت علی کرم اللہ وجہہ الکریم کی اولاد میں سے ہیں آپ کا سراپا حسین وجمیل بارعب اور پروقار چہرہ جس سے شان ولایت ٹپکتی اور طہارت و پاکیزگی کی نورانیت اس پر مستزاد رخسار بھرے ہوئے جس پر روحانیت کی کرنیں پھیلی ہوئی محسوس ہوتیں ۔پیشانی کشادہ جس پر خشیت ربانی کے چمکتے ہوئے انوار ۔لب متوازن خوبصورت جو فرصت کے وقت تسبیح میں متحرک رہتے۔ناک بلند ایک مناسب حد تک آنکھیں بڑی بڑی جو عبادت و ریاضت کے نور سے منور اور شرم وحیاء میں جھکی ہوئی۔ داڑھی کے بال گھنے بہت با وقار۔ سینۂ کشادہ جو روحانیت کا گنجینہ قد مبارک لمبا رنگ گورا بلکہ پورا وجود کردار اسلاف کی چلتی پھرتی تصویر تھی ۔
دینی تعلیم کا آغاز ● ابتدائی تعلیم براؤن شریف میں حاصل کی چونکہ والد گرامی حضور شعیب الاولیاء کی نگاہیں آپ کے مستقبل کا مشاہدہ کر رہی تھیں کہ آگے چل کر میرا یہ بیٹا لاکھوں مسلمانوں بلکہ پوری قوم کا قائد و رہبر بنے گا اس لئے آپ نے اس دور کے باصلاحیت اساتذہ کرام کی خدمت میں حصول تعلیم کے لئے بھیجا اور آپ نے بڑی محنت سے اپنی تعلیم مکمل کی یوں تو آپ کے کئی استاذ ہیں لیکن خاص طور سے اس دور کے مشہور عالم دین سلطان المناظرین سند المدرسین حضرت علامہ عتیق الرحمن صاحب قبلہ علیہ الرحمہ سے آپ نے خوب خوب فیض حاصل کیا۔ آپ نے اپنی زیادہ تر تعلیم اپنے ہی ادارہ دارالعلوم اہلسنت فیض الرسول براؤں شریف جس کے بانی آپ کے والد ماجد ومرشد کریم حضور شیخ المشائخ شعیب الاولیاء حضرت سیدنا یار علی علیہ الرحمہ ہیں۔ میں حاصل کی مظہر شعیب الاولیا حضور خلیفہ صاحب قبلہ علیہ الرحمہ اپنے اساتذہ کا بہت احترام کرتے تھے لاکھوں مریدین کے پیر اور عظیم الشان مقام پر فائز ہونے کے باوجود اگر آپ کے اساتذہ میں سے کوئٹہ استاذ آپ کی محفل میں آجاتے تو فوراً کھڑے ہو کر شایان شان انکی تعظیم کرتے اسکے بعد حاضرین کے سامنے ان کا تعارف کراتے اور رخصت کرتے وقت کافی نذر ونیاز پیش کرتے استاذ محترم خوش ہو کر خوب دعائیں دیتے حضور مظہر شعیب الاولیاء خانقاہ فیض الرسول کے سجادہ نشین اور دارلعلوم اہلسنت فیض الرسول براؤں شریف کے ناظم اعلی بلک روح رواں تھے آپ کی صدارت و نظامت میں ادارہ اور خانقاہ نے بہت ترقی کی بلکہ پورے ملک میں دارالعلوم فیض الرسول اور خانقاہ مقدسہ کی ہر اعتبار سے شہرت و مقبولیت حاصل تھی حضور خلیفہ صاحب قبلہ فرائض وسنن کے پا بند بچپن سے لے کر آخری عمر تک رہے مثلاً نماز پنجگانہ جماعت کے ساتھ ہی ادا کر تے۔ نماز چاشت اوابین واشراق اور قرآن مجید کی تلاوت اور دلائل الخیرات شریف نیز بزرگوں کے عطا کردہ ا ورادو وظائف ہمیشہ بڑی پابندی کے ساتھ پڑھا کرتے تھے۔حضور مظہر شعیب الاولیاء کی زندگی کے صاف وشفاف دامن میں حضور شعیب الاولیاء کے فیضان کرم نے علم واخلاق کے اتنے لالہ و گل بھر دیئے تھے کہ اس کی عطر بیزی کسی وقت بھی کم نہ ہو ئی۔ بلکہ حضور خلیفہ صاحب قبلہ کو دیکھنے والوں نے جس روش پر جوانی میں پایا اس میں کبھی بھی کچھ کمی نہ آئی۔ بلکہ جو عادت و اطوار آپ نے اپنے مرشد بر حق والد محترم حضور شعیب الاولیا علیہ الرحمہ کے اپنائے تھے حضور مظہر شعیب الاولیاء جب اپنے مریدوں میں تشریف فرما ہوتے اور تو ہر طرح سے ان کی اصلاح فرما تے ۔آپ بحمدہ تعالیٰ بہت بڑے متقی اور پرہیزگار تھے ۔غرضیکہ پوری زندگی حضور مظہر شعیب الاولیاء علیہ الرحمہ نے دارالعلوم اہلسنت فیض الرسول اور خانقاہ یار علویہ کی خدمت کرتے رہے اور ساتھ ہی ساتھ جملہ مریدین و معتقدین ومتوسلین پوری زندگی آپ کے فیوض وبرکات سے مالامال ہوتے رہے آپ کا وصال 19 رجب المرجب.1412/ھجری کی رات میں ہوئی. اس رت آپ کی طبیعت کچھ زیادہ ہی علیل ہوئی
تمام اھل عقیدت آپ کی حالت دیکھ کر درد و کرب کی تصویر بن گئے حضرت بار بار فرماتے تھے جلدی کرو وقت ہو رہا ہے لبوں پر ذکر خدا جاری تھا حسب معمول اس آخری رات بھی آپ نے عشاء کی نماز اداکی اور رات دو بجے شرع وتصوف کا یہ آفتاب و ماہتاب گلستان فیض الرسول کا باغبان مجاہد اسلام وسنیت اپنے لاکھوں نیاز مند اور عقیدت کیشوں کو روتا بلکتا اور تڑپتا ہوا چھوڑ کر اپنے مالک حقیقی سے ملا۔اناللہ واناالیہ راجعون ۔۔ اللہ تعالیٰ اپنے حبیب صلی اللہ علیہ وسلم کے صدقے میں آپ کے مزار مقدس پر رحمت و انوار کی بارش نازل فرمائے اور آپ کے فیوض وبرکات سے تمام مسلمانوں کو مالامال فرمائے
۔ابر رحمت تیرے مرقد پر گہر باری کرے ۔
حشر تک شان کریمی ناز بر داری کرے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

حیاتِ خلیل العلماء قدس سرہ کے انمول گوشے

تحریر: نازش مدنی مرادآبادیخادم التدریس جامعۃ المدینہ آن لائن باسنی ناگور (راجستھان)+918320346510 یوں تو دیار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے