نعت رسول: جہاں کو ہے ملی تابش حبیب ربّ اکبر سے

از قلم: شیخ عسکریؔ رضوی بنارسی
7856932585

پتہ ہم کو چلا ہے حضرت شبّیر و شبَّر سے
جہاں کو ہے ملی تابش حبیب ربّ اکبر سے

خدا نے ہے بنایا مصطفیٰ کو قاسم نعمت
وہ کیا ہے جو نہیں ملتا رسول اللہ کے در سے

ضرورت آ پڑے دیں کے لئے تم سر کٹا دینا
سبق ہم کو ملا ہے یہ شہ کونین کے گھر سے

بروز حشر کیسے جائیں گے وہ نار دوزخ میں
جِنہیں بھی ہو گئی ہیں نِسبَتیں آلِ پَیَمبَر سے

رسول پاک کی جو شان میں توہین کرتا ہے
اُڑا دو اس کے سَر کو حضرت حیدر کے خنجر سے

بشر اپنی طرح کہتا ہے جو سرکار طیبہ کو
وہ کیسے پائے گا جنت شفیع روز محشر سے

یقیناً جائے گا اے عسکریؔ تو باغ جنت میں
ترا بھی ملتا ہے شجرہ رضا کے پیارے اختر سے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نعت رسول: طائرِ مدینہ تو! لے کے دردِ دل جاتا

مرشدی تاج الشریعہ علیہ الرحمہ کے ایک مصرع پر طبع آزمائی کی کوشش نتیجۂ فکر: …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے