خواجہ غریب نواز نے کفر و ضلالت کے اندھیروں میں گم خلق خدا کو دین اسلام کا پیغام دے کر ان کے دلوں میں ایمان کا چراغ روشن کیا

غازی فاؤنڈیشن قادری وہار ،مدرسہ سیدالعلوم وزیر پور ،غریب نواز مسجد مصطفی آباد،سلطان الہند ٹرسٹ کھجوری اوررضا ایجو کیشنل مومنٹ جنتا کالونی میں جشن غریب نواز و لنگر کا اہتمام

نئی دہلی: 19 فروری، ہماری آواز(محمد طیب رضا)
دیار ہند پر سیّدنا خواجہ غریب نواز معین الدین چشتی اجمیری کا یہ احسان عظیم ہے کہ انہوں نے رضائے الٰہی کے حصول اور انسانیت کی زلف پریشاں کو سنوارنے کے لئے اپنے وطن عزیز کو الوداع کہا اور ہمارے ملک ہندوستان کا رخ کیا اور کفر و ضلالت کے اندھیروں میں گم خلق خدا کو دین اسلام کا پیغام دے کر ان کے دلوں میں ایمان کا چراغ روشن کیا۔ غازی فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام قادری وہار نتھو پورہ بھلسوا ڈیری کے دارالعلوم فیضان غازی میں منعقدہ جشن خواجہ غریب نواز میں بانی ادارہ مولانا نور الہدیٰ نوری نے اپنے خطبہْ صدارت میں ان خیالات کا اظہار کیا ۔ قبل ازیں قائد اجلاس قاری رئیس خان نوری نے ہند و پاک میں مذہب اسلام کے فروغ و ارتقا کو خواجہ غریب نواز کی زندہ جاوید کرامت قرار دیتے ہوئے ان کی حیات و خدمات پر روشنی ڈالی اور کہا کہ عصر حاضر میں ضروری ہے کہ ہم معاشرے میں ان اولیائے کرام کے پیغام امن و آشتی کو عام کریں ۔ مولانا سید قیصر خالد فردوسی نے ان خاصان خدا کی شعارِ زندگی کو مشعلِ راہ بنانے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ سید معین الدین اجمیری کا فیضان صرف ہند و پاک ہی نہیں بلکہ پورے عالم اسلام پر ساون بھادوں کی طرح برس رہا ہے اور تا قیامت یہ سلسلہ جاری رہے گا ۔ صدیاں گزر جانے کے بعد بھی آپ کا آستانہ مبارکہ مرجع خلائق بنا ہوا ہے جہاں سے آج بھی گمگشگان راہ کو منزل حق کا پتہ مل رہا ہے ۔ پروگرام کا آغاز قاری حسن رضا نے قرآنی آیات سے کیا اور مولانا ثنا ء اللہ کریمی ، قاری محمد شفیق ، برہان رضا نوری ، بلال رضا نوری ، صبا دہلوی ، انس رضا اور طلبائے دارالعلوم ہٰذا نے نعت و مناقب پیش کئے ۔ اہم شرکا میں ظہیر احمد انصاری ، ثابت علی ، ریاض احمد پردھان ، خالد بھائی ، عرفان احمد ، محمد اسلم اور اسرائیل بھائی کے نام شامل ہیں ۔ پروگرام کا اختتام صلوۃ و سلام ، شجرہ خانی ، دعا اور تقسیم لنگر کے ساتھ ہوا ۔مدرسہ احمدیہ سید العلوم انتظامیہ ایجوکیشن سوسائٹی کے زیر اہتمام جے جے کالونی وزیر پور میں جشن خواجہ غریب نواز کا انعقادکیا گیا جس میں مفتی سید محمد عتیق الرحمن راضی نوری منظری نے کہا کہ عطائے رسول سیدنا معین الدین چشتی علیہ الرحمہ کی شان بڑی نرالی اور عظیم ہے، ہندوستان میں ان کی تشریف آوری سے اسلام کو بہت فروغ ملا۔ ہندوستان کا اسلام صوفیاے کرام بالخصوص سلسلہ چشتیہ کے مشائخین کا رہین منت ہے۔ مولانا سید محمد ادیب الرحمن مصباحی نے خواجہ غریب نواز کے اوصاف و کمالات کے متعلق کہا کہ آپ کی تعلیمات خالص قرآن وسنت سے مستفاد ہیں۔پروگرام کا آغاز قاری سید محمد عامر رضا قادری نے تلاوت کلام اللہ سے کیا۔سید قطب الرحمن ہاشمی،سید خطیب الرحمن،محمد شہباز عالم، محمد حشمت اللہ،محمد عبداللہ،بابو نفس الرحمن وغیرہم نے بارگاہ خواجہ میں منظو م نذرانہ پیش کیا۔نظامت قاری نوشاد رضا عتیقی نے کی ۔اہم شرکامیںسید اسجد رضا،محمد افروز عرف چنٹو محمد اسحاق،محمد صغیر،محمد اسلام، نعیم انصاری،محمد ارشدکے نام قابل ذکر ہیں۔مصطفی آباد گلی نمبر ۴ کی غریب نواز مسجد میں جشن خواجہ غریب نواز کا انعقاد کیا گیا جس میں مقررین و شعرا نے خراج عقیدت پیش کیا اور اس کے بعد لنگر عام کا اہتمام ہوا۔اس جشن کا اہتمام حافظ شمشاد،حنیف منصوری اور قاری نادر وغیرہ نے کیا تھا۔اس موقع پر مولانا تسلیم رضا نے سرکار خواجہ غریب نواز کی سیرت پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواجہ غریب نواز نے دین کے بنیادی تقاضوں کو پورا کیا اور ہندوستان کا بادشاہ بنایا گیا۔انہوں نے کہا کہ ایک بار آپ کھیت میں کاشتکاری کررہے تھے کہ ایک ضعیف العمر شخص وہاں تشریف لائے جن کا نام سیدنا ابراہیم قندوزی تھا ۔ان کے بارے میں آپ زیادہ نہیں جانتے تھے ہاں اتنا ضرورت جانتے تھے کہ وہ ایک مسلمان اور سرکار دوعالم ﷺکے امتی ہیں اسی جذبے کے تحت آ پ انہیں انگوروں کا خوشہ دیا اور عزت و تکریم کا معاملہ کیا جس کے صلے میں انہوں نے آپ کو روٹی کھلائے جس سے آپ کے دل میں معرفت پیدا ہوئی ۔اس واقعے کی روشنی میں ہمیں بھی اپنے بچوں کے اندر بزرگوں کی خدمت کرنے کا جذبہ پیدا کرنا چاہئے تاکہ وہ بھی اسی طرح کے بزرگوں کی صحبت میسر ہوسکے۔سلطان الہند ایجو کیشنل فاؤنڈیشن ٹرسٹ کی جانب سے گلی نمبر ۱۷ ؍بی بلاک میں جشن سلطان الہند خواجہ غریب نواز کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت ٹرسٹ کے چیئر مین صوفی مولانا محمد اشفاق میاں جانی نے کی۔جشن کا اغاز قاری محمد رفیع کی تلاوت کلام سے ہوا ۔بعد ازاں مولانا غلام محمد ،مفتی تنظیف رضا ،مولانا صابر ،مولانا فاضل وغیرہ نے آ پ کی حیات و خدمات پر روشنی ڈالی۔اس موقع پر صوفی نفیس احمد صوفی عظیم،صوفی کمال الدین اور صوفی شکیل بطور خاص موجود رہے۔ دوسری جانب رضا ایجوکیشنل موومنٹ کے زیر انتظام جنتا کالونی گلی نمبر۱۹میں چلنے والا مدرسہ ضیاء القرآن میں لنگر خواجہ غریب نواز کا اہتمام کیا گیا جس میں سیکڑوں طلبہ و طالبات نے شرکت کی۔اس موقع پر محمد ادریس(سرپرست) ،محمد ظہیر رضوی(صدر)،محمد رفیق،محمد ارشاد،چاند محمد ،عبدالقادر،محمد طارق،محمد طیب رضا،محمد فیضان،محمد رضوان،محمد عابد،محمد عارف،جمال حسین ،کمال حسین وغیرہ بطور خاص موجود رہے۔

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

دارالقلم دہلی میں مولانا محمد یامین نعیمی کے لیے ایصال ثواب

دہلی، 11اپریل، ہماری آواز(پریس ریلیز)10 اپریل شنبہ کی شب میں بارہ بج کر 54 منٹ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے