منقبت سرکار غریب نواز علیہ الرحمۃ

نتیجۂ فکر: شہزادہ آصف بلال سنگرام پوری

ہیں سچ میں عاشق شاہ زماں غریب نواز
بلندیوں کے ہیں اک آسماں غریب نواز

ہمیں نہ خوف ہے اب آفتاب محشر کا
ہمارے واسطے ہیں سائباں غریب نواز

نگاہ فیض سے ذرہ بھی کردیں وہ تارہ
ہیں اس طرح کے شہ آستاں غریب نواز

کہاں زبان مری اور کہاں ثنا ان کی
گناہگاروں پہ ہیں مہرباں غریب نواز

ہیں ان کی عظمتیں فکر رسا سے بالا تر
میرے رسول کے سر نہاں غریب نواز

انھیں کے صدقے میں مانگوں تو پنجتن دیں گے
ہیں آل سرور کون و مکاں غریب نواز

ہیں تجھ سے کتنے غریبوں کی وہ صدا آصف
تبھی تو کہتا ہے سارا جہاں غریب نواز

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نعت رسول: طائرِ مدینہ تو! لے کے دردِ دل جاتا

مرشدی تاج الشریعہ علیہ الرحمہ کے ایک مصرع پر طبع آزمائی کی کوشش نتیجۂ فکر: …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے