ویلنٹائن ڈے منانے والوں کے نام….ایک پیغام!

تحریر: عبدالرحمن الخبیر قاسمی بستوی
ترجمان: تنظیم ابنائے ثاقب ورکن شوریٰ مرکز تحفظ اسلام ہند

محترم قارئین کرام!
14 فروری کو عالمی سطح پر ویلنٹائن ڈے منایا جاتا ہے، یہ عیسائیوں کا تہوار ہے اس دن عیسائی سرخ لباس زیب تن کرتے ہیں، پھولوں کے نذرانے پیش کرتے ہیں، آپس میں تحفہ تحائف دیا اور لیا جاتا ہے، محبت کا اظہار والہانہ انداز میں کیا جاتا ہے، اس تہوار کو منانے کا اک خاص انداز یہ ہوتا ہے کہ نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں کے بے پردگی اور بے حیائی کے ساتھ میل ملاپ، تحفے تحائف کا لین دین سے لے کر فحاشی و عریانی کا جتنا ہو سکے کھلے عام یا چوری چپکے ارتقاب کیا جاتا ہے، اس دن رقص، موسیقی، مے خوری، بدکاری کے ریکارڈ توڑے جاتے ہیں، اس طرح اسلامی تعلیمات کا سرِعام مذاق اڑایا جاتا ہے، اسلام ہمیں حیا اور پاکیزگی کا پیغام دیتا ہے۔

ارشاد باری تعالیٰ ہے :
اےنبی! مسلمان مردوں سے کہہ دو اپنی نگاہیں نیچی رکھیں اور اپنی شرمگاہوں کی حفاظت کریں یہ ان کے لیے بہت پاکیزہ ہے. بےشک اللہ کو ان کے کاموں کی خبر ہے. اور مسلمان عورتوں سے کہہ دو کہ وہ اپنی نگاہیں نیچی رکھیں اور اپنی پاکدامنی کی حفاظت کریں اور اپنی زینت کو ظاہر نہ کریں. (سورہ نور)

ایک اور جگہ ارشاد ہوا:
اور بدکاری کے قریب نہ جاؤ بے شک وہ بے حیائی ہے اور بہت ہی برا راستہ ہے

نیز آج کی نوجوان نسل یاد رکھےاگر آج اس طرح خوشی خوشی گناہوں کی دلدل میں دھنسے گی تو کل اس کی اولاد بھی اس نحوست کا شکار ہو گی، یہ محبت کا مذاق ہے، محبت تو ایک پاکیزہ انسانی جذبہ ہے جو بندہ مومن کے دل میں اللہ اور اس کے رسول کیلئے پیدا ہوتا ہے، ایسی محبت نہیں جو ہوس پرستی میں رنگی ہو۔

پس اس گناہ اور بدکاری سے بچنے کے لئے دنیا بھر میں "یومِ حیا” منایا جاتا ہے، کیونکہ اسلام ہمیں حیا اور پاکیزگی کا حکم دیتا ہے، اور غیر مسلموں کے تہوار منانے سے منا کرتا ہے۔

نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے فرمایا :

جو قوم جس قوم کی مشابہت اختیار کرے وہ انہی میں سے ہے

آخر میں میری نوجوان طبقے سے التجا ہے خدارا اس دن اپنے کردار کو داغدار کر کے پاش پاش ہونے سے بچا لیں، اپنے نامہ اعمال کو گناہوں کی سیاہی سے آلودہ نہ کریں اور 14 فروری کو "یومِ حیا”کے طور پر منائیں، اپنی بہن کو حجاب گفٹ کریں کیونکہ جو چیزیں عام ہوں اس کے توڑ کےلئے اس کا بدل تلاش کریں اور اسے خوب عام کریں تاکہ برائی بےحیائی بدکاری خود بخود ختم ہوجائے۔

اللہ رب العزت ہم سب کی عزتوں کی حفاظت فرمائے اور ہمیں شیطان کے شر سے محفوظ رکھے۔ آمین

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ازالہ شُبہات در آیاتِ جہاد (قسط دوم)

تحریر: کمال مصطفیٰ ازہری جوکھنپوریجامعة الأزهر الشريف ، مصر بسم الله الرحمن الرحيم شبہ نمبر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے