مدارس نظامیہ کے نصاب تعلیم کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے سلسلہ میں چند مشورے

تحریر: ابوالکلام قاسمی شمسی
سابق پرنسپل: مدرسہ اسلامیہ شمس الہدیٰ، پٹنہ

مدارس نظامیہ کا نصاب تعلیم اکثر بحث کا موضوع بنا رہتا ہے ،اس کی وجہ یہ ہے کہ اس کی تعلیم کی کل مدت 8؍ سال تحریر کی جاتی ہے ،اور اس کو فاضل یعنی ایم اے کے مساوی تسلیم کرنے کا مطالبہ کیا جاتا ہے،جبکہ دنیا کے کسی ملک میں ایسا نہیںہے،جب کبھی مدت تعلیم میں اضافہ کی بات کی جاتی ہے تو تنازع کھڑا ہوجاتاہے،اور معیار تعلیم کے کمزور ہونے کی بات شروع ہوجاتی ہے،جبکہ یہ حقیقت ہے کہ بہت سے مدارس نظامیہ نے اپنے نصاب تعلیم کو جدید تقاضوں سےہم آہنگ کرنے کے لئے اپنے نصاب تعلیم میں ضروری تبدیلی کی ہے اور مدت تعلیم میں بھی اضافہ کیاہے ،ان کے فارغین بھی باصلاحیت ہیں،ان کے فضلاء میں بھی کوئی کمی نظر نہیں آتی ہے،نصاب تعلیم کو جدید تقاضوں سےہم آہنگ کرنے کی وجہ سے ان مدارس کے نصاب تعلیم میں تنوع بھی پیدا ہوگیاہے،اور ان کے فضلاء کے لئے میدان بھی وسیع ہوئے ہیں، اسی تناظر میں کچھ مشورے پیش ہیں۔
(۱) موجودہ وقت میںہندوستان میں مدارس دو طرح کے ہیں (الف) آزاد مدارس (ب) مدارس ملحقہ۔
آزاد وہ مدارس ہیں جہاں درس نظامی کے مطابق تعلیم دی جاتی ہے، ان میں ابتدائی درجات بھی ہیں جن میں مادری زبان فارسی اور ابتدائی عصری تعلیم بھی دی جاتی ہے۔ ابتدائی درجات کے نصاب تعلیم میں وہ نصاب شامل کئے گئے ہیں جو عصری اداروں میں پڑھائے جاتے ہیں، ان میں اردو فارسی کے ساتھ ہندی، انگریزی، سائنس وغیرہ مضامین کی بھی تعلیم دی جاتی ہے، ان کا انتظام عوامی تعاون کے سے کیا جارہا ہے۔
مدارس ملحقہ وہ مدارس ہیں جو کسی بورڈ سے ملحق ہیں، ان میں اردو، فارسی ،عربی اور اسلامیات کے علاوہ اسکول ، کالج اور یونیورسٹی کے تمام مضامین شامل ہیں۔ ان مدارس کے نصاب تعلیم اور مراحل تعلیم مرتب ہیں، اس میں الگ الگ درجات کے لئے اسناد بھی جاری کی جاتی ہیں۔یہ مدارس ہمارے موضوع بحث سے خارج ہیں۔ ابھی میرے بحث کا موضوع آزاد مدارس یعنی مدارس نظامیہ ہیں، جن کی تعداد ملک میں بہت ہیں ، لیکن ان میں مدت تعلیم، نصاب تعلیم اور مراحل تعلیم میں یکسانیت نہیں ہے۔ ان مدارس میں ابتدائی درجات تو ہیں ، لیکن یہ ابتدائی درجات کہیں چار سال میں، تو کہیں پانچ سال ۔اس کے علاوہ ان کے نصاب تعلیم میں بھی یکسانیت نہیں ہے، مراحل تعلیم اور درجات معین نہیں ہیں۔اکثر مدارس میں فراغت کے بعد فضیلت کی سند دی جاتی ہے۔ ان کی اسناد کسی بورڈ ویونیورسٹی سے منظور نہیں ہیں۔اس طرح طلبہ وفارغین کو طرح طرح کی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔مدارس نظامیہ کے ابتدائی درجات پر ایک سرسری نظر ڈالنے سے یہ بات سمجھ میں آجاتی ہے ۔جیسا کہ مضمون میں مذکورہ مدارس نظامیہ کے ابتدائی درجات کے خاکہ سے واضح ہے۔
(۲) مدارس نظامیہ میں ابتدائی درجات کی تعلیم پر توجہ کم ہے، مدرسہ میں مدت تعلیم چار سال ہے، تو کہیں پانچ سال تو کہیں چھ سال ہے۔ چھوٹے چھوٹے مدارس میں تو ابتدائی درجات کی تعلیم کا اہتمام نہیں کے برابر ہے۔دوتین سال کچھ پڑھا دیتے ہیں ،پھر طلبہ عربی درجات میں داخلہ لے لیتے ہیں، اس کے لئے پچھلے درجات کے ٹرانسفر سرٹیفکیٹ کی بھی ضرورت نہیں ہوتی، اس کی وجہ سے طلبہ ابتدائی تعلیم اور عصری مضامین میں کمزور ہوتے ہیں، بلکہ بہت سے ناواقف رہ جاتے ہیں، نیز مدارس میں ایک مرتبہ فاضل کی سند دی جاتی ہے۔ درمیان میں کوئی سرٹیفکیٹ نہیں دی جاتی ہے، جس سے طلبہ کو مزید دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس طرح جن مدارس میں ابتدائی درجات چارسال یاپانچ سال پر مشتمل ہے،ان جملہ مدارس نظامیہ کے ابتدائی مراحل تعلیم میں اضافہ کرکے۸؍سال یا ۱۰؍سال کردیا جائے، تاکہ مڈل اور میٹرک کے برابر ہوجائے۔ پھر طلبہ کو اختیار دیا جائے کہ وہ اوپن اسکول بورڈ سے مڈل کا امتحان دے یا خود مدرسہ مڈل کی سرٹیفکیٹ فراہم کرائی جائے۔
(۳) عربی درجات سے پہلے ابتدائی درجات ۱۰؍سال پر مشتمل ہو تاکہ ابتدائی تعلیم میں پختگی پیدا ہوجائے اور میٹرک معیار کی تعلیم بھی ہوجائے۔جہاں تک درجہ نہم ودہم کو ابتدائی تعلیم میں شامل کرنے کی بات ہے تو اس سے فائدے تو بہت ہیں، البتہ اس کی وجہ سے نصاب تعلیم ۱۸؍سال کا ہوجائے گا۔ میرا خیال تو یہ ہے کہ اچھی تعلیم اور ایک اعلیٰ مقصدکو حاصل کرنے کے لئے اگر دو تین سال زیادہ لگ جائیں تو کوئی حرج کی بات نہیں ہے۔آخر کالج اور یونیورسٹی کے طلبہ کیسے تعلیم حاصل کرتے ہیں، اسی طرح مدارس میں بھی پریشانی نہیں ہوگی۔ درجہ دہم تک تعلیم حاصل کرنے کےبعد طلبہ اپنے لئے راہ عمل اختیار متعین کرسکتے ہیں، اگر وہ دینی تعلیم حاصل کرنا چاہیں گے تو وہ عربی درجات میں داخلہ لیں گے، اگر وہ عصری علوم حاصل کرنا چاہیں گے تو کالج میں داخلہ لیں گے، اگر وہ پیشہ وارانہ تعلیم حاصل کرنا چاہیں گے تو وہ اس پیشہ وارانہ کورس میں داخلہ لیں گے۔ غرض تمام راستے کھل جائیں گے۔ اس طرح مدارس کی تعلیم کی اہمیت ہمہ جہت ہوجائے گی۔
(۴) مدارس نظامیہ میں درمیان میں کوئی سند نہیں دی جاتی، جبکہ ملک کے نئے ماحول میں تو اس کی اور سخت ضرورت ہے۔ اسکول کا سرٹیفکیٹ شہریت کے ثبوت کے لئلے ایک اہم دستاویز ہے۔ نئے شہریت قانون کے مطابق آدھار کارڈ، ووٹر کارڈ قابل قبول نہیں ہے، اس کے لئے دیگر دستاویزات کے ساتھ اسکول کی سرٹیفکیٹ بھی قابل قبول ہے۔شہریت ثابت کرنے کے لئے پاسپوٹ کی ضرورت ہے۔ پاسپورٹ بنانے کے لئے تاریخ ولادت کے ثبوت کے لئے آئی اے، بی اے کی سرٹیفکیٹ قابل قبول نہیں ہے ، اس کے لئے میٹرک یا اس کے مساوی منظور شدہ سرٹیفکیٹ ہی قابل قبول ہے۔مدارس نظامیہ میں اب تک سرٹیفکیٹ جاری نہیں کی گئی، وہ وقت گزر گیا، آئندہ نسل کی حفاظت کے لئے اب سرٹیفکیٹ جاری کرنے کی ضرورت ہے۔ غریب فیملی کے فارغین جن کے پاس موروثی زمین جائیداد نہیں ، وہ جہاں سے تعلیم حاصل کئے ہیں ،ان کے پاس وہاں کی سرٹیفکیٹ ہوتی تو اس کو ثبوت میں دکھاتے مگر مدارس نظامیہ سے سرٹیفکیٹ جاری نہیں کی گئی تو کیا دکھائیں گے، یہ تو پرانے فارغین کا معاملہ ہے، ان کا وقت تو گزرگیا، اب نئی نسل کی ضرورت اور حفاظت پر غور کیا جائے، سی اے اے قانون بن چکا ہے، یہ کسی وقت نافذ ہوسکتا ہے۔ شہریت کے ثبوت کے لئے سرٹیفکیٹ کو خاص اہمیت حاصل ہے، اس لئے مدارس نظامیہ کے ذریعہ سرٹیفکیٹ کا جاری کیا جانا بھی نہایت ضروری ہے۔
(۵) درجات کے نام اس انداز پر رکھے جائیں جیسا کہ مدارس میں رائج ہیں، تو بہتر ہوگا، ویسے درجہ اول، دوم، سوم وغیرہ سے بھی موسوم کیا جاسکتا ہے۔ بہار کے مدارس میں نام رائج ہیں وہ یہ ہیں تحتانیہ، وسطانیہ، فوقانیہ، مولوی، عالم ،فاضل ،یہ نام مدارس کے اعتبار سے بہتر معلوم ہوتے ہیں اور ان سے مدارس کی شناخت بھی واضح ہوتی ہے۔ یہ بات درجہ اول ،دوم سوم وغیرہ میں نہیں ہے۔
(۶) مدارس اسلامیہ کی اسناد کو ثانوی سطح تک NIOSیعنی مرکزی اوپن اسکول سسٹم سے منظورکرادیا جائے یا طلبہ کو پرائیویٹ طور پر اس ادارہ سے امتحان دلا دیا جائے تو میٹرک کی منظور شدہ سرٹیفکیٹ حاصل ہوجائے گی اور اس کی وجہ سے آئندہ مراحل میں آسانی ہوجائے گی۔اعلیٰ تعلیم کے لئے بھی اوپن یونیورسٹی وغیرہ قائم ہیں، جیسے مولانا آزاد اوپن یونیورسٹی، نالندہ اوپن یونیورسٹی، ان یونیورسٹیوں کے امتحانات میں شرکت کرکے اعلیٰ ڈگری بھی حاصل کی جاسکتی ہے۔
(۷) ملک میں نئی تعلیمی پالیسی کا نفاذ کیا گیا ہے، گرچہ موجودہ وقت میں مدارس اسلامیہ اس سے مستثنیٰ ہیں ،لیکن ملک کے بدلتے ہوئے حالات کے تناظر میں اس کی تیاری سے صرف نظر نہیں کیا جاسکتا ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ ہم اپنے مدارس کی مدت تعلیم، مراحل تعلیم اور نصاب تعلیم کو نئی تعلیمی پالیسی کے مطابق بنانے کے لئے ابھی سے تیاری شروع کردیں۔ نئی تعلیمی پالیسی کے سلسلے میں کچھ ضروری باتیں پیش ہیں۔
(۱) نئی تعلیمی پالیسی میں بھی داخلہ ایسے طلبہ ؍ طالبات کا لیا جائے جن کی عمر ۶؍سال مکمل ہوگئی ہو۔
(۲) تعلیم کی ابتدا نرسری اور کے جی سے ہوگی اور یہ تین سال پر مشتمل ہوگا ،اس کے بعد درجہ اول اور دوم ہوگا۔ اس طرح دونوں ملاکر پانچ سال بنیادی تعلیم کے ہوں گے۔
(۳) بنیادی تعلیم کے بعد تین سے پانچ درجات تک یعنی ۳؍ سال پری مڈل کہلائیں گے ،پھر اس کے بعد درجہ ۶؍ سے ۸؍تک یعنی ۳؍ سال مڈل اور درجہ ۹؍ سے ۱۲؍ تک یعنی ۴؍ سال سکینڈری کہلائیں گے۔ اس کی ترتیب اس طرح ہوگی۔۵+۳+۳+۴ ۱۵یعنی ۱۴؍سے ۱۸؍سال کی عمر میں طلبہ سکینڈری امتحان پاس کریں گے۔ اس طرح نئی تعلیمی پالیسی کے تحت مدارس اسلامیہ کی مدت تعلیم ،مراحل تعلیم اور نصاب تعلیم کو مرتب کریں گے تو اس کا خاکہ حسب ذیل ہوگا۔
۵+۳+۳+۴+۲+۳+۲یعنی درجۂ اطفال کو چھوڑ کر مدت تعلیم ۱۷؍سال ہوگی۔یہی عصری اداروں میں بھی جاری ہے۔ مدت تعلیم کا خاکہ حسب ذیل ہے۔
(۱) بنیادی تعلیم—–۵؍سال
نرسری یک سال اور کے جی دو سال یعنی کل ۳؍ سال
درجہ ۱،ودرجہ ۲—۲؍سال یعنی۳+۲؍ کل ۵؍ سال
(۲) ماقبل مڈل— درجہ ۳،درجہ ۴؍اوردرجہ۵ —۳؍سال
(۳) مڈل—درجہ ۶،درجہ۷؍اوردرجہ۸؍—–۳؍سال
(۴) ثانوی—- درجہ ۹، درجہ۱۰، درجہ۱۱؍ اور درجہ۱۲- — -۴؍سال
(۵)مولوی۲؍سال:یعنی اول ،دوم
(۶) عالم ۳؍سال:یعنی عالم اول،د وم ،سوم
(۷) فاضل ۲؍سال: یعنی اول ،دوم
درجات کا خلاصہ حسب ذیل ہے۔
اطفال: ۳؍سال
تحتانیہ: ۴؍سال
وسطانیہ ۴؍سال
فوقانیہ: ۲؍سال
مولوی: ۲؍سال
عالم مع آنرس: ۲؍سال
فاضل : ۲؍سال
مجوزہ نصاب تعلیم ایک نظر میں:
نئی تعلیمی پالیسی میں 4؍ سال کی عمر سے تعلیم شروع کرنے کی اجازت موجود ہے،جبکہ درجہ اول کی حسب سابق 7؍ سال کی عمر میں داخلہ شروع ھوگا،اس طرح 4 ؍ سال سے 6؍ سال کے طلبہ ؍ طالبات کے لیے مدارس میں مکتب کی تعلیم کا اہتمام کیا جائے گا، مکتب کا نظام درجہ اطفال کے نام سے موسوم ہوگا اور تین درجات اول،دوم اور سوم پر مشتمل ہوگا،درجہ اطفال میں تعلیم 4؍ گھنٹی ہوگی،ہر گھنٹی 30؍ منٹ کی ہوگی،آخر میں 30؍ منٹ کا وقفہ ہوگا، جس میں کھیل کود،ورزش وغیرہ کا اہتمام ہوگا،اس کے بعد چھٹی ہوگی۔
درجہ اطفال اول کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ اطفال اول ( class 1)روزانہ 4؍ گھنٹی ،ہر گھنٹی 30؍ منٹ ،آخر میں وقفہ 30؍ منٹ موضوع (1) عربی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(2)اردو: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی (3)اردو تحریر:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(4) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل 24؍ گھنٹی تفصیلی مضامین(1) عربی: عربی حروف شناسی ،پکچر بک کے ذریعہ(2) اردو:اردو حروف شناسی پکچر بک کے ذریعہ(3) اردو تحریر: اردو رائٹنگ ،رائٹنگ بک کے ذریعہ، ڈارئنگ ، پینٹنگ(4) حساب: عدد شناسی،گنتی پکچر بک کے ذریعہ
درجہ اطفال دوم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ اطفال دوم class 2روانہ 4؍ گھنٹی ،ہر گھنٹی 30؍ منٹ ،آخر میں وقفہ 30؍ منٹ موضوع(1)عربی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(2)اردو:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(3)اردو تحریر:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(4) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹیکل 24؍ گھنٹی تفصیلی مضامین(1) عربی:گذشتہ سال کے اسباق کا اعادہ،بغدادی قاعدہ،صوبہ میں رائج اس طرح کی کتاب ،کلمہ و دعا(2) اردو:گذشتہ سال کے اسباق کا اعادہ،اردو ریڈر کی کوئی کتاب،صوبہ میں رائج اردو ریڈر بک(3) اردو تحریر: اردو رائیٹنگ بک سے حروف اور جملہ لکھنااور مشق کرنا،،ڈرائنگ،پینٹنگ وغیرہ(4) حساب: پہاڑہ پکچر بک کے ذریعہ،1 سے 100 تک زبانی لکھنا،گنتی گننا
درجہ اطفال سوم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ اطفال سوم:class 3روانہ 4؍ گھنٹی ،ہر گھنٹی 30؍ منٹ ،اخر میں وقفہ 30؍ منٹ موضوع(1)عربی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(2)اردو:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(3)اردو تحریر:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(4) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل 24؍ گھنٹی تفصیلی مضامین(1) عربی: یسرنا القرآن ،صوبہ میں رائج اس طرح کی کوئی کتاب،کلمہ و دعاء(2) اردو: اردو ریڈر کی کوئی کتاب،صوبہ میں رائج اردو ریڈر بک(3) اردو تحریر:اردو رائٹنگ بک دیکھ کر لکھنا۔ ڈرائنگ،پینٹنگ وغیرہ(4) حساب: پہاڑہ 1 سے 10 تک زبانی گننا اور لکھنا، جوڑ، گھٹاواور تقسیم پکچر بک کی مدد سے
درجہ اول کے نصاب تعلیم کا خاکہ
تعلیم کا وقت 5؍ گھنٹے 40؍ منٹ ہوں گے،روزانہ8؍ گھنٹی اور ہر گھنٹی 35؍ منٹ کی ہوگی،درمیان میں 40؍ منٹ کا خالی وقفہ رہے گا، درجہ اول میں داخلہ کی عمر 6+ ہوگی یا حکومت کے ذریعہ درجہ اول میں داخلہ کے لئے متعین کردہ عمر ہوگی شعبۂ حفظ کی تعلیم 3؍ سال کی ہوگی ، طلبہ ابتدائی 2؍ سال درجہ اول آور دوم میں ناظرہ قرآن کریم ،اردو وغیرہ پڑھیں گے، اس کے بعد شعبہ حفظ میں جائیں گے سوم ،چہارم اور پنجم تین سال میں حفظ مکمل کریں گے ،پھر درجہ 6,7 اور 8 میں داخل کئے جائیں گے ،اوردرجہ 8؍ تک کلاس کے طلبہ کے ساتھ تعلیم حاصل کریں گے،اس طرح حفظ کی تعلیم بھی مکمل ھو جائے گی اور اردو اور عصری مضامین بھی پڑھ لیں گے،درجہ اول کےلئے نصاب تعلیم کے مضامین کا خاکہ پیش ھےمضامین کے انتخاب میں طلبہ کی عمر،اس کی ضرورت،سال کا لحاظ رکھا گیاہے، اور بڑے مدارس کے نصاب تعلیم سے استفادہ، بھی کیا گیا ہے۔
درجہ اول(Class1)
ناظرہ قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات تھیوری ( کتابی) ، ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) دینیات عملی و اخلاقی تعلیم زبانی ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) اُردو کتاب ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) اردو تحریر سلیٹ ؍ تختی پر ،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) حساب: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) ہندی + انگریزی،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کھیل کود؍ باغبانی وغیرہ،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ اول کے مضامین
(1) ناظرہ قرآن مجید مع تجوید ،نورانی قاعدہ؍ اسی طرح کی کوئی کتاب؍ یا اپنے صوبہ میں رائج کتاب سورۂ فیل سے ناس و سورۂ فاتحہ تک حفظ
(2) دینیات تھیوری ، کلمہ طیبہ،شہادت،نماز کی دعائیں،دعائے قنوت ،التحیات ،درود شریف وغیرہ زبانی یاد کرانا
(3) دینیات عملی و اخلاقی تعلیم،وضو،نماز وغیرہ کی عملی مشق، اخلاقی کہانیاں سناکر طلبہ کی ذہن سازی
(4) اردو: سرکاری یا مستند اداروں کی شائع ابتدائی کتاب، اردو زبان کا قاعدہ یا اس جیسی ابتدائی کتاب
(5) اردو تحریر: اردو دیکھ کر نقل کرنا،املا نویسی ،خوشخطی وغیرہ
(6) حساب:درجہ اول کے مطابق کوئی کتاب، یا سرکاری ادارہ سے شائع کوئی کتاب،100؍ تک گنتی،پہاڑہ 10؍ تک،معمولی جوڑ ،گھٹاو وغیرہ
(7) ہندی: ہفتہ میں 3؍ دن انگریزی،ہفتہ میں 3؍ دن
(8) پی ٹی وغیرہ کی آسان مشق ،باغبانی، پودوں کی سینچائی ۔ممبران غور سے پڑھیں ،اور اپنی رائے تحریر کریں،رائے کے بعد ترمیمی ڈرافٹ پیش کیا جائے، پوری بحث کے بعد فائنل ڈرافٹ منظوری کے لئے پیش کیا جائے گا۔یہ ایک خاکہ ہے، نمونہ کے طور پر پیش ہے ،صلاح و مشورہ سے اس طرح نصاب تعلیم مرتب کیا جائے تو مزید نافع ہوسکتا ہے۔یہ ابتدائی درجات کے لئے ہے،جہاں مکتب یا ابتدائی درجات کی تعلیم ہوتی ہے،بڑے مدارس یا عربی درجات سے اس کا کوئی تعلق نہیں ہوگا۔
درجہ دوم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ دوم:(2 Class (
ناظرہ قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات تھیوری ( کتابی) و عملی، ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) اُردو تحریر سلیٹ؍ تختی پر ، ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کھیل کود؍ باغبانی وغیرہ،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ دوم کے مضامین
(1) ناظرہ قرآن مجید مع تجوید:پارہ عم ناظرہ سورہ الضحیٰ سے سورۂ ہمزہ تک حفظ
(2) دینیات تھیوری و عملی:صوبہ میں رائج دینیات کی کوئی کتاب مع عملی مشق نماز
(3) اردو کتاب: صوبہ میں رائج درجہ دوم کی کوئی کتاب،ابتدائی اردو قواعد زبانی
(4) اردو تحریر، خوشخطی،املاء نویسی،نقل نویسی تختی؍ سلیٹ پر
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ دوم کی کتاب ،پہاڑہ 11؍ سے 20؍ تک زبانی
(6) ہندی :صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ دوم کی کتاب مع ہندی نویسی
(7) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ دوم کی کتاب مع آنگلش رائٹنگ
(8) پی ٹی وغیرہ کی آسان مشق ،باغبانی، پودوں کی سینچائی۔
درجہ سوم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ سوم Class3))
ناظرہ قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات تھیوری ( کتابی) و عملی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی(4) اُردو تحریر سلیٹ؍ تختی پر: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کھیل کود؍ باغبانی وغیرہ ،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ سوم کے مضامین
(1) ناظرہ قرآن مجید مع تجوید :ابتدائی سات پارے صحت مخارج کے ساتھ ناظرہ سورہ القدر سے سورہ الناس تک حفظ
(2) دینیات تھیوری و عملی:صوبہ میں رائج دینیات کی کوئی کتاب، منتخب دعائیں حفظ،نماز اور روزہ کی اہمیت زبانی
(3) اردو کتاب: صوبہ میں رائج درجہ سوم کی اردو کتاب،ابتدائی اردو قواعد زبانی
(4) اردو تحریر: خوشخطی، املاء نویسی کی مشق،خوشخطی( کاپی پر)
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ سوم میں داخل حساب کی کتاب ، پہاڑہ 1؍ سے 100؍ تک گنتی زبانی گننا اور لکھنا
(6) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ سوم کی ہندی کتاب مع ہندی نویسی
(7) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ سوم میں داخل انگریزی کتاب مع آنگلش رائٹنگ
(8) پی ٹی وغیرہ کی آسان مشق ،باغبانی، پودوں کی سینچائیدرجہ سوم سے شعبہ حفظ بھی شروع ہوگا، حفظ کے ساتھ دیکر مضامین کی تعلیم مفید ہے کہ نہیں ،اس سلسلہ میں کچھ ماہرین کی رائے میں نے نقل کی تھی کہ مفید نہیں ہے،اس پر بعض حضرات نے تحریر کیا کہ حفظ کے ساتھ مختصر مضامین کو بھی شامل کیا جاسکتا ہے،انہوں نے اپنا تجربہ بھی پیش کیا تھا،بہرحال یہ بحث کا موضوع ہے،اس گروپ میں اگر ماہرین موجود ہیں تو رائے پیش کریں اگر نہیں ہے تو رائے معلوم کرکے شیئر کریں،اگر حفظ کے ساتھ دیگر مضامین شامل کئے جاسکتے ہیں تو پھر مختصر نصاب حفظ کے ساتھ بعد میں پیش کیا جائے گا۔ان شاءاللہ
درجہ چہارم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ چہارم Class 4))
قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی،ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) اُردو تحریر : ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6)عام معلومات:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(7) ہندی : ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8 ) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ چہارم کے مضامین
(1) قرآن مجید مع تجوید آٹھ پارے سے بیس پارے تک صحت مخارج کے ساتھ ناظرہ سورہ التین سے سورہ الناس تک حفظ
(2) دینیات:صوبہ میں رائج درجہ چہارم میں دینیات کی کوئی کتاب، گزشتہ درجات میں یاد کی ہوئی دعاؤں کا اعادہ، اذان کے بعد کی دعا،نماز جنازہ کی دعائیں زبانی
(3) اردو کتاب: صوبہ اسکول میں داخل درجۂ چہارم کی اردو کتاب، اردو قواعد کی کوئی کتاب
(4) اردو تحریر:خطوط نویسی، درخواست نویسی ،املاء نویسی زبانی خوشخطی کے ساتھ ( کاپی پر)
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ چہارم میں داخل حساب کی کتاب
(6)عام معلومات :(1) صوبہ میں رائج سائنس کی ابتدائی کتاب (2) اپنے صوبہ کا جغرافیائی معلومات زبانی
(7) ہندی :صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ چہارم کی ہندی کتاب مع ہندی نویسی
(8 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ چہارم میں داخل انگریزی کتاب مع آنگلش رائٹنگ درجۂ چہارم میں بھی شعبۂ حفظ ہے ، حفظ کے ساتھ دگر مضامین کی تعلیم مفید ہے کہ نہیں ،اس سلسلہ میں کچھ ماہرین کی رائے میں نے نقل کی تھی کہ مفید نہیں ھے،اس پر بعض حضرات نے تحریر کیا کہ حفظ کے ساتھ مختصر مضامین کو بھی شامل کیا جاسکتا ہے،انہوں نے اپنا تجربہ بھی پیش کیا تھا،بہرحال یہ بحث کا موضوع ہے،اس گروپ میں اگر ماہرین موجود ہیں تو رائے پیش کریں اگر نہیں ہے تو رائے معلوم کرکے شیئرکریں،اگر حفظ کے ساتھ دیگر مضامین شامل کئے جاسکتے ہیں تو پھر مختصر نصاب حفظ کے ساتھ بعد میں پیش کیا جائے گا۔ان شاءاللہ
درجہ پنجم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ پنجم Class 5))
قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی،ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات: ہفتہ میں6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب،ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) اُردو تحریر: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6)عام معلومات:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(7) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8 ) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ پنجم کے مضامین
(1) قرآن مجید مع تجوید: پارہ 21 سے پارہ 30 تک صحت مخارج کے ساتھ ناظرہ سورہ البروج سے سورہ الناس تک حفظ
(2)دینیات : صوبہ میں رائج درجہ پنجم میں دینیات کی کوئی کتاب، ادعیہ ماثورہ میں سے 15دعاؤں کو زبانی یاد کرنا،کھانے ،پینے اور سونے کے وقت کی دعائیں زبانی یاد کرانا
(3) اردو کتاب: صوبہ اسکول میں داخل درجہ پنجم کی اردو کتاب، اردو قواعد کی کوئی کتاب
(4) اردو تحریر:درخواست نویسی ، مضمون نویسی، حمد، نعت،اخلاقی نظمیں یاد کرانا اور خوشخط کاپی پر لکھنا
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ پنجم میں داخل حساب کی کتاب
(6)عام معلومات:(1) صوبہ میں رائج سائنس کی ابتدائی کتاب (2) ہندوستان کا جغرافیہ اور تاریخی مقامات کی معلومات زبانی یا صوبہ میں رائج کوئی کتاب
(7) ہندی : صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ پنجم کی ہندی کتاب مع ہندی نویسی مع مختصر ہندی گرامر زبانی
(8 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ پنجم میں داخل انگریزی کتاب مع مختصر انگریزی گرامر زبانیدرجہ پنجم میں بھی شعبہ حفظ ہے ، حفظ کے ساتھ دیگر مضامین کی تعلیم مفیدہے کہ نہیں ،اس سلسلہ میں کچھ ماہرین کی رائے میں نے نقل کی تھی کہ مفید نہیں ہے،اس پر بعض حضرات نے تحریر کیا کہ حفظ کے ساتھ مختصر مضامین کو بھی شامل کیا جاسکتا ہے،انہوں نے اپنا تجربہ بھی پیش کیا تھا،بہرحال یہ بحث کا موضوع ہے،اس گروپ میں اگر ماہرین موجود ہیں تو رائے پیش کریں اگر نہیں ہے تو رائے معلوم کرکے شیئر کریں،اگر حفظ کے ساتھ دیگر مضامین شامل کئے جاسکتے ہیں تو پھر مختصر نصاب حفظ کے ساتھ بعد میں پیش کیا جائے گا۔ان شاءاللہ درجہ اطفال اول، دوم اور سوم نیز درجہ اول سے درجہ پنجم تک نصاب کا خاکہ پیش کیا گیا ہے،ممبران ان کا مطالعہ کرکے اپنی رائے تحریر کرنے کی زحمت کریں ۔
درجہ ششم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ ششم Class 6))
قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی۔۔ ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب۔ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) اُردو تحریر، ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب ۔ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6)عام معلومات:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(7) ہندی ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8 ) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ ششم کے مضامین
(1) قرآن مجید مع تجوید: مکمل پارہ عم حفظ صحت مخارج کے ساتھ ترجمہ پارہ عم مکمل
(2) دینیات:صوبہ میں رائج درجہ ششم کے معیار کی دینیات کی کوئی کتاب، تاریخ اسلام وسیرت رحمت عالم یا اس جیسی کوئی کتاب
(3) اردو کتاب:صوبہ اسکول میں داخل درجہ ششم کی اردو کتاب، اردو قواعد کی کوئی کتاب
(4) اردو تحریر: انشاء نویسی؍ خطوط نویسی کی صوبہ میں رائج کوئی کتاب،بیت بازی،طغریٰ نویسی وغیرہ
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ ششم میں داخل حساب کی کتاب
(6)عام معلومات:(1) صوبہ میں رائج سائنس کی کتاب
(2) صوبہ میں رائج جغرافیہ کی کوئی کتاب
(7) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ ششم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(8 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ ششم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی ابتدائی کتاب شعبۂ حفظ کے طلبہ جن کا حفظ مکمل ہو جائے گا،وہ درجہ ششم میں شامل ہوجائیں گے، جن کا مکمل نہیں ہوگا ،وہ حفظ بھی مکمل کریں گے اور درجہ ششم کے کچھ مضامین پڑھائے جائیں گے،شعبۂ حفظ کا نصاب آخر میں جاری کیا جائے گا، ان شاءاللہ
درجہ ہفتم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ ہفتم Class 7))
قرآن مجید مع تجوید 6؍ گھنٹی،ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب، ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) فارسی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) سائنس:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(7) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8 ) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ ہفتم کے مضامین
(1) قرآن مجید : سورہ فاتحہ و سورہ بقرہ ربع تک حفظ صحت مخارج کے ساتھ ترجمہ ربع تک
(2) دینیات:صوبہ میں رائج درجہ ہفتم کے معیار کی دینیات کی کوئی کتاب، تاریخ اسلام وسیرت درجہ ہفتم کے معیار کی کوئی کتاب
(3) اردو کتاب: صوبہ اسکول میں داخل درجہ ہفتم کی اردو کتاب، اردو قواعد کی کوئی کتاب
(4) فارسی:صفوہ المصادر،فارسی کی پہلی کتاب،صوبہ کے اسکول میں داخل فارسی کی ابتدائی کتاب
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ ہفتم میں داخل حساب کی کتاب
(6)سائنس: صوبہ کے اسکول میں داخل سائنس کی کتاب
(7) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ ہفتم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(8 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ ہفتم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی ابتدائی کتاب
درجہ ہشتم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ ہشتم Class 8)) قرآن مجید: 6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) دینیات: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) اردو کتاب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) فارسی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) سائنس:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(7) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8 ) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ ہشتم کے مضامین
(1) قرآن مجید:اعادہ ناظرہ قرآن مکمل،اعادہ پارہ عم و سوری بقرہ ربع تک صحت مخارج کے ساتھ مع ترجمہ
(2) دینیات :صوبہ میں رائج درجہ ہشتم کے معیار کی دینیات کی کوئی کتاب، تاریخ اسلام وسیرت : تاریخ اسلام کی کوئی کتاب خلافت راشدہ ،بنی امیہ و عباسیہ
(3) اردو کتاب: صوبہ اسکول میں داخل درجہ ہشتم کی اردو کتاب، اردو قواعد کی کوئی کتاب
(4) فارسی: گلستاں باب 8 ،صوبہ کے اسکول میں داخل فارسی کی کتاب
(5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ ہشتم میں داخل حساب کی کتاب
(6)سائنس: صوبہ کے اسکول میں داخل سائنس کی کتاب
(7) ہندی :صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ ہشتم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(8 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ ہشتم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی ابتدائی کتاب
درجہ نہم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ نہم Class 9))
صرف: 6 گھنٹی ،ہفتہ کے 6؍ دن میں 6؍ گھنٹی
(2) نحو:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) عربی ادب اول:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) عربی دوم :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) ہندی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کمپیوٹر ہفتہ میں 6 گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ نہم کے مضامین
(1) میزان و منشعب،پنج گنج مکمل یا اس معیار کی صرف کی کتاب
(2) نحو:نحومیر،شرح مأۃ عامل مکمل یا اس معیار کی نحو کی کتاب
(3) عربی ادب اول :القرأۃ الواضحۃ اول یا اس معیار کی کوئی کتاب
(4) عربی ادب دوم: مفتاح العربیہ اول و ثانی یا اس معیار کی کوئی کتاب
( 5)حساب صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ نہم کی حساب کی کتاب
(6) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ نہم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(7 ) انگریزی :صوبہ کے اسکول میں درجہ نہم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی کوئی کتاب
(8) کمپیوٹر: ابتدائی اصطلاحات،اردو کمپوزنگ کی مشق
درجہ د ہم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ دہم Class 10))
صرف :6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) نحو: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) دینیات:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) عربی ادب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6 گھنٹی
(6) ہندی : ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کمپیوٹر:ہفتہ میں 6 گھنٹی ،کل گھنٹی 48
درجہ دہم کے مضامین
(1) صرف:علم الصیغہ،فصل اکبری خاصیات یا اس معیار کی کوئی کتاب
(2) نحو: ہدایت النحو مکمل
(3) نورالایضاح مکمل ، قدوری تا کتاب الحج
(4) عربی ادب:القراہ الواضحۃ ثانی،نفحۃ الادب مکمل
( 5) حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ دہم میں داخل حساب کی کتاب
(6) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ دہم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(7 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ دہم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی کوئی کتاب
(8) کمپیوٹر:اردو،ہندی اور انگریزی کمپوزنگ،میل ٹائپنگ،میل بھیجنا وغیرہ
پہلے یہ پروگرام تھا کہ درس نظامی کے درجات سے پہلے ابتدائی درجات کے لئے نصاب تعلیم مرتب کئے جائیں، اسی کے مطابق پہلے درجہ 8؍ تک کے نصاب تعلیم کو پیش کیا گیا ، پھر بعض ممبر نے تحریر کیا کہ درجہ 9؍ اور درجہ 10؍ کا نصاب بھی پیش کیا جائے، اس لئے درجہ 9؍ اور درجہ 10؍ کے نصاب تعلیم کو پیش کیاگیا،پہلے جو نصاب تعلیم پیش کیاگیا،ان دونوں درجات میں صرف عصری مضامین شامل کئے گئے ،عربی مضامین کو شامل نہیں کیا گیا ہے،اس کی وجہ سے نصاب تعلیم 18؍ سال کا ہو گیا ہے، ابتدائی وثانوی 10 سال + 8؍ سال عربی ۔اس سے بہت سے فائدے ھیں،جن ذکر ماقبل میں ہوچکا ہے،البتہ مدت تعلیم 18؍ سال ہو گئی ہے،بعض حضرات کی رائے آئی کہ اس کو کم ہونا چاہئے،اسی کے پیش نظر ایک اور نصاب تعلیم کا خاکہ پیش کیا جارہا ھے،اس میں عربی درجات کے دو سال یعنی عربی اول اور دوم میں عربی مضامین اور عصری مضامین شامل کئے گئے ہیں ،عربی مضامین میں کوئی کمی نہیں کی گئی ہے،صرف عصری مضامین کا اضافہ کیا گیا ہے ،اس کی وجہ سے دو سال کی کمی ہو گئی ہے ،اس طرح نصاب تعلیم 16؍ سال پر مشتمل ہوگا ، یعنی ابتدائی درجات 8؍ + 8؍ سال = 16 سال ،نصاب تعلیم کا خاکہ پیش ہے۔
درجہ نہم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ نہم Class 9))
صرف: 6 گھنٹی ،ہفتہ کے 6؍ دن میں 6؍ گھنٹی
(2) نحو:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) عربی ادب اول :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) عربی دوم:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(6) ہندی :ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کمپیوٹر :ہفتہ میں 6 گھنٹی کل گھنٹی 48
درجہ نہم کے مضامین
(1) میزان و منشعب،پنج گنج مکمل یا اس معیار کی صرف کی کتاب
(2) نحو:نحومیر،شرح مأۃ عامل مکمل یا اس معیار کی نحو کی کتاب
(3) عربی ادب اول:القراہ الواضحہ اول یا اس معیار کی کوئی کتاب
(4) عربی ادب دوم: مفتاح العربیہ اول و ثانی یا اس معیار کی کوئی کتاب
( 5)حساب صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ نہم کی حساب کی کتاب
(6) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ نہم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(7 ) انگریزی:صوبہ کے اسکول میں درجہ نہم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی کوئی کتاب
(8) کمپیوٹر : ابتدائی اصطلاحات،اردو کمپوزنگ کی مشق
درجہ د ہم کے نصاب تعلیم کا خاکہ
درجہ دہم Class 10)) صرف :6؍ گھنٹی، ہفتہ کے چھ دن میں 6 گھنٹی
(2) نحو: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(3) دینیات: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(4) عربی ادب:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(5) حساب: ہفتہ میں6 گھنٹی
(6) ہندی: ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(7) انگریزی:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی
(8) کمپیوٹر:ہفتہ میں 6؍ گھنٹی ،کل گھنٹی 48
درجہ دہم کے مضامین
(1) صرف:علم الصیغہ،فصل اکبری خاصیات یا اس معیار کی کوئی کتاب
(2) نحو: ہدایۃ النحو مکمل
(3) نورالایضاح مکمل ،قدوری تا کتاب الحج
(4) عربی ادب:القراءۃ الواضحۃ ثانی،نفحۃ الادب مکمل
( 5)حساب:صوبہ کے اسکول میں درجہ دہم میں داخل حساب کی کتاب
(6) ہندی:صوبہ کے اسکول میں داخل درجہ دہم کی ہندی کتاب ، ہندی گرامر کی کوئی کتاب
(7 ) انگریزی : صوبہ کے اسکول میں درجہ دہم میں داخل انگریزی کتاب ، انگریزی گرامر کی کوئی کتاب
(8) کمپیوٹر:اردو،ہندی اور انگریزی کمپوزنگ،میل ٹائپنگ،میل بھیجنا وغیرہ
بہرحال مدارس اسلامیہ دین کے قلعے ہیں، موجودہ وقت میں اس کی سخت ضرورت ہے۔اس کے بنیادی ڈھانچے میں بغیر تبدیلی لاتے ہوئے اس کے نصاب تعلیم کو مفید سے مفید بنانے کی ضرورت ہے، تاکہ ہمارے طلبہ وفارغین کسی میدان میں پیچھے نہ رہیںاور مدارس کی افادیت میں تنوع پیدا ہوسکے۔

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

تعلیم سے ہی بدلے گی قوم کی تصویر

تحریر: محمد ہاشم اعظمی مصباحینوادہ مبارکپور اعظم گڑھ یو پی 9839171719 انسان کو دیگر مخلوقات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے