نظم: وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے

ذکیؔ طارق بارہ بنکوی
سعادت گنج، بارہ بنکی یوپی، بھارت
چیف ایڈیٹر: روزنامہ صداے بسمل

جو سورگ سے سندر ہے جو دھرتی پہ گگن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
کڑ کڑ میں ذکی جس کے مدھرتا ہے پھبن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
جو رام کو شنکر کو کنہیا کو تھا پیارا
جو کرشن کی اور رادھا کی آنکھوں کا تھا تارا
جو گاندھی کا گلشن ہے جو نہرو کا چمن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
ہے تاج محل جس کی اک انمول دھروہر
ہے تیز گتی سے جو رواں پرگتی پتھ پر
خوشحالی،وکاس اور جو ترقی کا گگن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
مل جل کے جہاں رہتے ہیں سب ہندو مسلماں
اپدیشک ہیں اِکتا کے جہاں گیتا و قرآں
ہر سمت جہاں عام محبت کا چلن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
شنکھ اور اذانوں کی جہاں بجتی ہے سرگم
ہوتی ہے کتھا اور تلاوت جہاں ہر دم
ڈوبا ہوا اِکتا میں جہاں واتا ورن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
ہیں سیتا وخواجہ کے چرن چنہ جہاں پر
ہے مندر و مسجد سے جہاں سلسلہ گھر گھر
یعنی کہ جہاں گنگا و جمنا کا ملن ہے
وہ میرا وطن میرا وطن میرا وطن ہے
ذکی طارق بارہ بنکوی
سعادتگنج،بارہ بنکی

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نظم :مُبارک ہو عزیزو پھر مہِ رمضان آیا ہے

نتیجۂ فکر: استاد بریلوی، نینی تال مُبارک ہو عزیزو پھر مہِ رمضان آیا ہےہزاروں برکتیں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے