غزل: دیکھو دل کش نظارے صنم

خیال آرائی: فیضان علی فیضان، پاکستان

دیکھو دل کش نظارے صنم
ہیں زمیں پر ستارے صنم

نیند کیسے ہمیں آئیگی
روبرو ہیں ہمارے صنم

اسکے آگے کہیں کیا تمہیں
ہم غموں کے دولارے صنم

آپ نے جب بھی پکارا ہمیں
ہو گئے ہم تمہارے صنم

زندگی، عاشقی، دوستی
ہیں تمہارے سہارے صنم

کیا تمہیں یاد ہے وہ گھڑی
وہ جو لمحے گزارے صنم

ہیں وہ معصوم فیضان بہت
خوبصورت ہمارے صنم

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

غزل : کسی کے پاس نہیں وقت اب کسی کے لیے

رشحات قلم : حافظ فیضان علی فیضان وہ چاہے دل کے لئے ہو کہ دل …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے