نعت رسول: آنکھ گنبد پہ جب جمی ہوگی

نتیجۂ فکر:شمس الحق علیمی، مہراج گنج

آنکھ گنبد پہ جب جمی ہوگی
دل کی دنیا بدل گئی ہوگی

لب پہ ڈالی درود کی رکھنا
جب مدینہ روانگی ہوگی

لو لگاؤ گے جب مدینے سے
رشک مہتاب زندگی ہوگی

جامِ کوثر ہی پینے کی خاطر
دَورِ محشر میں تشنگی ہوگی

جو مرا بغض مصطفیٰ لے کر
رد سبھی اس کی بندگی ہوگی

رب اکبر کے حکم سے اک دن
پھر وہیں پر وہ بابری ہوگی

خواب میں آئیں گے شہِ بطحا
عشق کی آگ جب لگی ہوگی

جائے گا سوئے طیبہ شمسی بھی
جب اجازت حُضور کی ہوگی

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نعت : جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو

رشحات خامہ : محمد نثار نظامی مہراج گنج۔ صاحب جودو سخا کی بات ہو تو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے