زرعی قوانین کے خاتمے تک احتجاج جاری رہے گا: کسان تنظیموں کا مرکزی حکومت کے ساتھ میٹنگ کے بعد رد عمل

نئی دہلی: 4 جنوری (اے این آئی): جیسے ہی زرعی قوانین کے خلاف احتجاج 40 ویں دن میں داخل ہوا، کسان اتحادوں نے مرکز سے آٹھویں میٹنگ میں متنازعہ قوانین کے مکمل انخلا کے لئے دباؤ ڈالا اور کہا کہ اگر کارروائیوں کو واپس نہیں لیا گیا تو احتجاجی کارکردگی جاری رہے گی۔
"ہمارا مطالبات پر تبادلہ خیال کیا گیا- جس میں تینوں قوانین کی منسوخی اور ایم ایس پی شامل ہے۔ لیکن جب تک ہم قانون واپس نہیں لیتے ہیں ہم گھر نہیں جائیں گے)”
ہندوستانی کسان یونین کے ترجمان راکیش ٹکائٹ نے آج شام دہلی کے ویگان بھون میں منعقدہ ایک اجلاس کے بعد اے این آئی کو یہ بات بتائی۔ آل انڈیا کسان سبھا کے جنرل سکریٹری حنان مولا نے کہا کہ وہ زرعی قوانین کے نفاذ کے علاوہ کسی اور چیز پر تبادلہ خیال نہیں کرنا چاہتے۔
حکومت بہت دباؤ میں ہے۔ ہم سب نے کہا کہ یہ ہمارا مطالبہ ہے (قوانین کی منسوخی)۔ ہم قوانین کی منسوخی کے علاوہ کسی اور چیز پر تبادلہ خیال نہیں کرنا چاہتے۔
جب تک قانون واپس نہیں لیا جاتا احتجاج کو واپس نہیں لیا جائے گا۔ مولا نے کہا ، ہندوستانی کسان یونین کے یودویر سنگھ نے کہا کہ انہوں نے قوانین پر بات کرنے کی حکومت کی درخواست کو مسترد کردیا۔
"وزیر چاہتے تھے کہ ہم قانون پوائنٹ پر بات کریں۔ ہم نے اسے مسترد کردیا اور کہا کہ قوانین پر بحث کرنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے کیونکہ ہم قوانین کا مکمل رول بیک چاہتے ہیں۔ حکومت ہمیں ترامیم کی طرف لے جانے کا ارادہ رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا ، لیکن ہم اس کو قبول نہیں کریں گے۔
اس اجلاس میں شریک کسان رہنما درشن پال نے نامہ نگاروں کو بتایا ، "حکومت اب یہ سمجھ گئی ہے کہ کسان تنظیمیں زرعی قوانین کو منسوخ کیے بغیر کوئی بحث نہیں چاہتے ہیں۔ ہم نے بتایا کہ حکومت ان اقدامات کو قبول کرے گی جسے ہم قبول نہیں کریں گے۔”

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بڑھتی ہوئی گستاخیوں کے خلاف تحریک فروغِ اسلام رمضان کی اکیس تاریخ کو ملک گیر سطح پر جیل بھرو مہم کا آغاز کرے گی: قمر غنی عثمانی

پیغمبرِ اسلام ﷺ کی شان میں منصوبہ بند گستاخیوں کے سدِّ باب اور گستاخوں کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے