کووڈ19 ویکسین کو "بی۔جے۔پی۔ ویکسین” قرار دینا سائنس دانوں کی بے عزتی ہے: کانگریس کے رکن پارلیمنٹ

نئی دہلی: 3 جنوری (اے این آئی): کانگریس کے راجیہ سبھا ممبر (رکن پارلیمنٹ) اکھلیش پرساد سنگھ نے اتوار کے روز سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو کے تبصرہ کی مذمت کی جس میں انھوں نے COVID-19 ویکسین کو "بی۔جے۔پی۔ کی ویکسین” کہا تھا۔
اے۔این۔آئی۔ سے بات کرتے ہوئے پرساد نے کہا: "کووڈ-19 ویکسین کو بی۔جے۔پی۔ کی ویکسین قرار دینا سائنس دانوں کی توہین ہے۔ سائنس دانوں نے یہ ویکسین ملک کے لیے تیار کی ہے۔”
"ایسے سائنسدان ہیں جو حکومت کے ماتحت کام کر رہے ہیں۔ وہ واقعتا ملک کے لئے کام کر رہے ہیں۔
حکومت ویکسین نہیں لگاتی ہے۔ وزیر اعظم اور ان کے وزرا نے اسے نہیں بنایا ہے۔ اس کو سائنس دانوں نے تحقیق کی بنیاد پر تیار کیا ہے اور اس کا خیرمقدم کیا جانا چاہئے۔ انھوں نے کہا۔
تنقید کے بعد، ایس۔پی۔ کے سربراہ نے ٹویٹ کیا کہ وہ سائنس دانوں کی قابلیت پر "مکمل پراعتماد ہیں” لیکن بی۔جے۔پی۔ کی ویکسین نہیں لیں گے۔

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بڑھتی ہوئی گستاخیوں کے خلاف تحریک فروغِ اسلام رمضان کی اکیس تاریخ کو ملک گیر سطح پر جیل بھرو مہم کا آغاز کرے گی: قمر غنی عثمانی

پیغمبرِ اسلام ﷺ کی شان میں منصوبہ بند گستاخیوں کے سدِّ باب اور گستاخوں کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے