شب زفاف (شادی کی پہلی رات) سے متعلق ہدایات

تحریر: محمد یونس رضوی مصباحی،کولکاتا
رکن صفّه اسٹوڈینٹس آرگنائزیشن آف جامعہ اشرفیہ
موبائل نمبر:7278694574

نکاح کے بعد پہلی رات ازدواجی زندگی میں بڑی اہمیت رکھتی ہے، اگر یہ رات خوشگوار گذر جائے تو اس کے اثرات پوری زندگی باقی رہتے ہیں۔ اس مضمون میں بعض ہدایات تو شب زفاف کے لیے مخصوص ہیں، جبکہ اکثر ہدایات ایسی ہیں جو پوری زندگی کے لیے ہیں۔

سہاگ رات ہی ایک نئی زندگی کا آغاز ہے، ایک نئے ولولہ کا نام ہے۔ زندگی کی خوشیوں کا مرکزی نکتہ یہی شب زفاف ہے، اسی رات ایک لڑکا لڑکی میاں بیوی میں تبدیل ہو جاتے ہیں۔ اسی رات ایک نیا گھر تشکیل پاتا ہے ۔

بیوی سے پہلی ملاقات میں بات چیت سے پہلے سلام کرے، پھر وضو کرکے دو رکعت نماز پڑھے ، اس کا طریقہ یہ ہے :
شوہر آگے بڑھ کر امامت کرے جبکہ دلہن دولہے کے پیچھے نماز ادا کرے. اس سے دلہا دلہن کے دل میں اگر کوئی نفرت ، کراہیت یا ناپسندیگی ہو گی تو ان شاء اللہ دور ہوجائے گی. اس کے بعد دولہا دلہن کو اپنے قریب کرکے اپنے ہاتھ کو دلہن کی پیشانی پر رکھ کر یہ دعا پڑھے.

” اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ خَيْرَهَا وَخَيْرَ مَا جَبَلْتَهَا عَلَيْهِ وَأَعُوذُ بِكَ مِنْ شَرِّهَا وَمِنْ شَرِّ مَا جَبَلْتَهَا عَلَيْهِ ” .

ترجمہ : اے اللہ ! میں تجھ سے اس کی ذات کی بھلائی مانگتا ہوں اور بھلائی اس چیز کی جس پر تو نے ان کو پیدا کیا یعنی اچھے اخلاق، اور میں تیری پناہ چاہتا ہوں اس کی برائی سے اور اس چیز کی برائی سے جس پر تو نے اسے پیدا کیا یعنی برے اخلاق و افعال۔

یہ دعا بڑی مؤثر ہے، خلوص نیت کے ساتھ اس کا اہتمام ہوتو اس کے واضح اثرات دیکھنے کو ملیں گے۔ اس کے بعد اس بات کا خوب خیال رکھیں کہ زوجین شادی سے پہلے اجنبی اور غیر مانوس ہوتے ہیں، لہٰذا جماع اور صحبت میں جلد بازی نہ کرے، بلکہ پہلے انسیت ومحبت اور خوش طبعی کی باتیں ہوں، تحفے تحائف کا لین دین ہو، اس لیے کہ یہ عمل زوجین کے درمیان محبت کے اضافہ کا سبب ہوگا۔

جب جماع کا ارادہ ہوتو آہستہ آہستہ بیوی کو اپنی طرف مائل و قریب کرے۔ ملحوظ رہے عورت گھر کی ملکہ بھی ہے اور فطری طور سے محبوبہ بھی، آپ کی رفیقہ حیات اور دکھ درد میں معاون و مددگار بھی، اس لئے محبت و الفت کا اظہار کرنے کے ساتھ ساتھ اپنا وقار اور مقام کا خیال رکھا جائے۔ جماع سے قبل یہ مسنون دعا پڑھ لے :

"بِسْمِ اللّٰهِ اللّٰهُمَّ جَنِّبْنِي الشَّيْطَانَ وَجَنِّبِ الشَّيْطَانَ مَا رَزَقْتَنَا”
ترجمہ : ہم مدد چاہتے ہیں اللہ کے نام کے ساتھ، اے اللہ تو ہمیں جو اولاد نصیب کرے اِس کو شیطان سے اور شیطان کو اس سے دور رکھ۔

یاد رہے ان دعاؤں کو بغیر دیکھے پڑھنا ضروری نہیں، بلکہ دیکھ کر بھی پڑھ سکتے ہیں۔

جماع کے وقت قبلہ رُخ نہ ہوں کہ یہ احترام قبلہ کے خلاف ہے۔

حیض (ماہواری) کی حالت میں جماع کرنا قرآن وسنت کی رو سے حرام اور گناہِ کبیرہ ہے جس سے بچنا انتہائی ضروری ہے۔

صحبت کے بعد بہتر یہ ہے کہ غسل یا وضو کرکے سویا جائے۔

یاد رکھیں کہ جماع نفس کی خواہش پورا کرنے کی نیت سے نہ ہو، بلکہ اچھی نیت سے کیا جائے۔ مثلاً: عفت و پاکدامنی کا حصول، بیوی کا حق ادا کرنا اور اولاد صالح پیدا ہو اور داعی الی اللہ بنے وغیرہ وغیرہ امور کی نیت کرے تاکہ لطف ولذت کے ساتھ ساتھ یہ عمل اجر وثواب کا باعث بھی بنے۔ میاں بیوی رات کی باتیں اپنے دوست واحباب کے سامنے بیان کرنے سے اجتناب کریں کہ یہ بے شرمی اور سخت گناہ کی بات ہے۔

اللہ تعالیٰ ہم سب کو زندگی کے ہر شعبے میں سنت و شریعت کے مطابق کام کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور ہمیں خوشگوار ازدواجی زندگی عطا فرمائے۔ آمین

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

نیم روافض کا حکم شرعی

تحریر: طارق انور مصباحی، کیرالہ چند سالوں سے سنی کہلانے والوں میں ایک طبقہ اسلاف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے