مسلم بیٹیوں کے نام رضا اکیڈمی کا درد بھرا پیغام

تحریر: ظفرالدین رضوی
خطیب و امام رضا جامع مسجد گئو شالہ روڈ ملنڈ ممبئی

اے میری قوم کی مقدس شہزادیوں تم ہماری شان و شوکت ہو،تم ہماری قوم کے ہیرےوجواہرات ہو تم ہماری قوم کی معطر خوشبو ہو،جس کے بغیر ہمارے دنیائے چمن کی خوشبو ادھوری ہے تم ہماری قوم کی امانت و عزت ہو تم کو اللہ رب العزت نے بڑا مقام عطاء کیا ہے جدت پسندی کی وجہ سے جب کسی شہزادی کے سر سےدوپٹہ سرکتا ہے تو ہمارے دل پہ گہری چوٹیں لگتی ہیں اور سر شرم سے اور آنکھیں نیچے جکھنے پہ مجبور ہوجاتی ہیں تم اپنے مقام و مرتبہ کو پہچانو تم دنیائے انسانیت کا وہ حسین چمن ہو جس سے پوری دنیا مہکتی ہے اور اسلام میں تمہارا بہت بڑامرتبہ و مقام ہے،تمہارے ماں باپ کا وقار تمہاری ذات میں پوشیدہ ہے ماں تمہاری جنت ہے تو باپ جنت کی چابی ہے،اگر یہ تم سے روٹھ گئے تو رب روٹھ جائے گا اور اگر رب ناراض ہوگیاتو ساری دنیا کی عیش و عشرت دھری کی دھری رہ جائیں گی
آج جب ہم اپنے معاشرے کا فی زمانہ جائزہ لیتے ہیں تویہ بات روز روشن کیطرح نمایاں نظر آتی ہے کہ جن بچیوں کا چہرہ کبھی کوئی غیر محرم دیکھ نہیں سکتا تھا آج وہی آزادئی نسواں کے دلدل میں پھنس کر اپنے ایمان وعقیدے کا سودا کرکے اپنی دنیاوآخرت دونوں برباد کرنے پر تلی ہوئی ہیں یہ بات صاف لفظوں میں کہتا چلوں کہ ہماری مراد وہ مسلم لڑکیاں ہیں جنھوں نے دنیاوی لالچ میں آکر ہندو دھرم اپنانے کی حماقت کی ہے یہ ان کی ناعاقبت اندیشی ہی ہے کہ انھوں نے دنیا کی عیش و عشرت کی خاطر غیر مسلم لڑکوں سے شادی کرکے اپنی عاقبت سنوارنے کے بجائے جہنم کا ایندھن بننے کو تیار ہوگئیں اور اپنے مقام و مرتبہ و عزت و تکریم اور شان و شوکت کو معاشرتی جدت پسندی کے دلدل میں پھینک دیا ہے جو ان کیلئے ھلاکت ہی ھلاکت ہے ایک وہ بھی دور تھا جب اسلام مخالف عناصر تمہارے پردے کے اہتمام کی دھائی دیتے تھے تمہاری پاکیزگئ نفس کی مثال دیا کرتے تھے تمہاری چال ڈھال اور نشست و برخاست کا خطبہ پڑھا کرتے تھے تمہاری جھکی ہوئی نظروں کی مثالیں دینے میں فخر محسوس کیا کرتے تھے کہ قوم مسلم کی بہو بیٹیاں اپنا گھربار سب کچھ برباد ہوتے ہوئے برداشت کرسکتیں ہیں لیکن کبھی اپنے ایمان کا سودا ہرگز نہیں کرسکتیں ہیں لیکن آج کی اس چکا چوند سی دنیا نے جو اس وقت فیشن پرستی اور آزاد خیالی میں اچھی بھلی ذہنیت کو اپنے لپیٹ میں لے رکھا ہے اور ہماری قوم کی وہ مقدس شہزادیاں جن کی نگاہوں کے سامنے ان کا دین ہی ان کیلئے سب کچھ تھا وہی اسلام دشمن عناصر کے جھانسے میں آکر اپنے ایمان کا سودا کررہی ہیں جوان کے لئے نہایت ہی خطرناک عمل ہےانھوں نے دنیاوی عیش و عشرت اور بےڈھنگی زندگی کی خاطر اپنے ایمان کا سودا کرکے جہنم خرید لی اب ان کا اسلام سے رشتہ ٹوٹ چکا ہے ابھی بھی وقت ہے ان لڑکیوں کیلئے جو غیر مسلموں سے شادی کرنے کے باوجود بھی اپنے ایمان کو چھپائی ہوئی ہیں انہیں اپنے گھر واپسی کی تدبیریں کرنی چاہئے اور اپنے علمائے کرام سے رجوع کرکے آگے کی زندگی گزارنے کی فکر کرنے کی ضروت ہے اب ہم ان بچیوں کو پیغام دینا چاہتے ہیں جواسکولوں،کالجوں،ہاسٹلوں،یونیورسٹیوں اور مالس وغیرہ میں پڑھتی اور کام کرتی ہیں انہیں غیر مسلم لڑکوں سے ہوشیار رہنے کی سخت ضرورت ہے،اے قوم مسلم کی عفت مآب بیٹیوں اور بہنوں کیا تمہیں شہزادئی رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی انمول زندگی یاد نہیں ہے وہ رسول ہاشمی صلی اللہ علیہ وسلم کی شہزادی ہونے کے باوجود گھر کا سارا کام کاج خود ہی کیا کرتی تھیں کیا ان کی حیات و خدمات تمہاری نگاہوں کے سامنے نہیں ہے انکی زندگی کے ہر پہلو پہ جب تمہاری نظر پڑی گی تو یقین ہوجائے گا کہ اس دنیا کی ساری رنگینیاں ورعنائیاں سب بیکار ہیں آج ہر مذہب کا ماننے والا حضرت فاطمہ کی زندگی کی مثال دینے پر مجبور ہے اے میری قوم کی مقدس شہزادیوں تم مقدس رسول کی مقدس امت میں شامل ہو اپنی عظمت کو پہچانوتمہارےسامنے اس دنیا کی رنگینیوں کی کوئی حیثیت نہیں ہے یہ دنیا کی عیش و عشرت چند روزہ ہے یہ دنیا فانی ہے آخرت کی فکر کرو اگر تم نے حضرت فاطمہ رضی اللہ تعالی عنہا کی طرز زندگی کو اپنا شیوہ بنالیا تواس فانی دنیا کی ساری بہاریں تمہارے قدموں پہ قربان ہوجائیں گی اور آخرت کی دائمی دنیا میں بھی کامیاب ہوجاؤگی غیر مذاہب کی آزادئ نسواں سے تمہارا کوئی سروکار نہیں ہونا چاہئے اسکی کیطرف تمہیں دیکھنے بھی کی کوئی ضرورت نہیں ہے آزادئی نسواں کی دہائی دینے والوں کیلئے یہ فانی دنیا ہی جنت ہے انہوں نے اسی کو اپنی جنت سمجھ لیا ہے ان کے بھکاوے میں مت آؤ وہ تمہیں تباہ و برباد کرنے پر تلے ہوئے ہیں ان کے حربے کو کامیاب ہونے مت دو اپنی کامیاب تاریخ اٹھا کے دیکھو ماضی میں خواتین اسلام نے ایسی سنہری تاریخیں مرتب کی ہیں جس کی مثال دور دور تک نظر نہیں آتی تمہاری یاد دہانی کیلئے ایک بات بتاتا چلوں کہ کفارومشرکین کا مشن،اسلام مخالف ہے ان کا منصوبہ یہی ہے کہ مسلمان لڑکیوں کو کسی بھی طریقے سے بہلا پھسلاکر مرتد کیاجائے اور انکی ہرطرح کی دکھاوے کی مدد کی جائے تاکہ وہ غیر مسلم لڑکوں سے شادی کرنے پر آمادہ ہوسکیں کچھ شر پسندوں کے ذریعہ ویڈیوز بھی اس سلسلے میں بڑی تیزی سے شوسل میڈیا پر وائرل ہورہی ہیں جس میں صاف صاف ان کی منشاء ظاہر ہے لہذاان کے بھکاوے میں نہ آئیں تم جس دین کے ماننے والی ہو جس نبئی پاک کاکلمہ پڑھتی ہو وہ سارے جہان میں سب سے اعلی واولی نبی ہیں اور اسلام سے بہتر کوئی اور مذہب نہیں ہے یہ ایسا مذہب ہے جو اللہ کے نزدیک سب سے زیادہ بہتر ہے جیسا کہ اللہ رب العزت قرآن پاک میں ارشاد فرماتا ہے ان الدین عنداللہ الاسلام ترجمہ بیشک اللہ کے نزدیک سب سے اچھا مذہب مذہب اسلام ہے اس کے سامنےجتنے مذاہب ہیں سب باطل ہیں ایسے میں اسلام کی مقدس شہزادیوں کو غیر مسلم لڑکوں سے شادی کرنا اپنے آپ کو خود ہی عذاب کے گارعمیق میں گرانااور ڈھکیلنا ہےاور کچھ جاہل اور فیشن لیبل قسم کی لڑکیاں بڑے دھڑلے کیساتھ جس گھرمیں نورونکہت کی بارشیں ہو رہی تھیں اسی گھر کوچھوڑ کر بت پرست گھر کو اپنانے میں خوشی محسوس کررہی ہیں ان کی آنکھوں پہ جدت پسندی اور کفروشرک کی پٹی باندھ دی گئی ہے نئی سوچ اور فیشن نے جدت پسندی کی سیاہ چادر اوڑھنے والی لڑکیوں نے اپنی پاکیزہ عصمتوں کو خود ہی تار تار کرنا شروع کردیا ہے اسلامی رسم و رواج کو قصۂ پارینہ سمجھ کر آزاد خیالی کو اپنی زندگی کا اصل مقصد سمجھ لیاہے اس کے پیچھے ان کے والدین کا بھی ہاتھ ہے ماں باپ نے بھی انکی عریانیت، انا،فیشن پرستی پر آنکھ موند رکھا ہواہے یوں کہ لیجئے کہ انکے والدین کا اس موذی مرض کے فروغ میں بڑا عمل دخل ہے ارتداد کے اس ناسورنے ان لڑکیوں کی عزت و آبرو کے وقار کو بڑے سستے داموں میں فروخت کردیا اور غیر مسلم کے ساتھ میل ملاپ ہی تک محدود نہ رہیں بلکہ ان سے شادیاں تک کر بیٹھی ہیں جو نہایت ہی بھیانک اور خطرناک کام ہے ایسی باتوں سے ہماری مسلم بچیوں کیلئے ان سے دوری بنانے میں ہی عافیت ہے جب ان سے دوری بنائے رکھیں گی تو وہ گمراہ کن عناصرناکام ہوجائیں گے
اے میری قوم کی پاک دامن بیٹیوں تم سے رضااکیڈمی درخواست کرتی ہے کہ غیر مسلم لڑکوں سے میل ملاپ اور دوستی کرنے سے بچو ان کی ہر چال اور طور طریقے سے ہوشیار رہو تاکہ وہ تمہیں گمراہ نہ کرسکیں ہمیں امید ہے کہ ہماری باتوں پر مکمل عمل کروگی اور اپنے ماں باپ اور اپنے خاندان اور اپنے مذہب کا نام روشن کرنے میں فخر محسوس کروگی
اللہ تبارک و تعالی اپنے پیارے حبیب صلی اللہ علیہ وسلم کے صدقہ و طفیل ہماری قوم کی بہو بیٹیوں کے ایمان و عقیدے اور عزت و آبرو کی حفاظت فرمائے اور دشمنان اسلام کے مکروفریب اور ان کے شرسے محفوظ و مامون فرمائے آمین بجاہ سید المرسلین صلی اللہ علیہ وسلم

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانبدارانہ نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

رمضان کریم اور ہم: ایک جائزہ

تحریر: منزہ فردوس بنت عبدالرحیمایم. اے. سال اول آکولہ مہاراشٹرا ایک بار پھر عظمتوں اور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے