کچھوچھہ شریف میں پیر سید کمیل اشرف اشرفی الجیلانی علیہ الرحمہ کا عرس چہلم شان وشوکت کے ساتھ اختتام پذیر

امبیدکرنگر، کچھوچھہ شریف ہماری آواز
عالمی شہرت یافتہ علماومشایخ اور واجب الاحترام قابل قدر علمی وروحانی شخصیات، حفاظ کرام،قرائے قرآن، شعراوارباب سخن اور مختلف شعبہ ہائے زندگی کے سرکرفہ افراد،طلبہ واساتذہ مدارس نے اجتناعی طور پرحضور پیر صاحب قبلہ رضی اللہ تعالی عنہ کی مغفرت اور بلندی درجات کے لیے قرآن خوانی اور ایصال ثواب کا اہتمام کیا اور بارگہ قاضی الحاجات میں رب تبارک وتعالی سے فریاد کی کہ مولی تعالی اپنے حبیب پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے صدقے میں حضور پیر طریقت کو اعلی علیین میں مقام عطا فرمائے۔
پرگرام کااہتمام خانقاہ مخدومثانی کی تاریخی مرکزی جامع مسجد میں رکھی گئی تھی، جسے خود حضرت سید کمیل اشرف صاحب نے بہ نفس نفیس بڑے ذوق وشوق سےتعمیرکروایا تھا، پوری مسجد اور صحن وغیرہ عقیدت مندوں سے بھری ہویی تھی، باوجودیکہ عقیدت مندوں اور دوردرواز کے مریدین ومتوسلین کوحالات کودیکھتے ہوئے انے سے منع کیاگیاتھا. پروگرام کاآغا تلاوت کلام پاک سے ہوا، اس کے بعد مختلف شعراۂے کرام اور مداحان رسالت نے بارگاہ مصطفی علیہ التحیۃ والثنامیں خراج عقیدت پیش کیا، خصوصیت کے ساتھ حضرت قسمت سکندرپوری نے اپنی زندہ جاوید منقبت پڑھ کرکے مجمع پر وجد وکیف طاری کردیا.
عرس چہلم کے پہلے باضابطہ خطیب حضرت علامہ مسعود احمد برکاتی استاذ جامعہ اشرفیہ مبارک پور نے اپنے خطاب میں موت اعر حیاتاخروی کی فضیلت پرخطاب کرتے ہوئے کہا کہ صالحین اور پرہیزگاروں کے لیے موت ایک تحفہ ہے، اور وہ زیادہ سکون کے ساتھ موت کوگلے لگاتے ہیں، اہل تقوی موتسے ڈرتے نہیں کیونکہ وہ صرف اللہ سے ڈرتے ہیں.
انٹر نیشنل شہرت یافتہ خطیب حضرت مولانا سید محمدہاشمی میاں نے کہا کہ موت مومن کو مٹانے کے لیے نہیں رب سے ملانے کے لیے آتی ہے، موت بندہ اور رب کے درمیان ایک پل کانام ہے، اس سے گزرکرہی بندہ اپنےرب کے حضورحاضرہوتاہے، اور حضوراکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی قبرمیں زیارت کرتا ہے، اور عالم برزخ سے گزرکرجنت میں پہنچتاہے، موت مٹاتی نہیں ملاتی ہے، اسی لیے قرآن میں کہا گیاموت کامزہ چکھناہے،اوردوسری بات یہ ہے کہ موت نفس پر طاری ہوتی ہے، روح پر نہیں، اسی لیے کل نفس کہاگیا کل روح نہیں کہا گیا
مولاناسیدمحمداشرف صدرآل انڈیاعلماومشائخ بورڈ نے کہاکہ حضرت سید کمیل اشرف اشرفی جیلانی سلسلہ اشرفیہ کے کوہ گراں تھے، آپ نے سلسلہ اشرفیہ کے فروغ میں کلیدی کردار ادا کیا، اپ کی ذات مرجع ومنبع کی حیثیت رکھتی تھی، ان کے چلےجانے سے کچھوچھی گھرانا سوناہوگیا، مولانااشرفی نے کہاکہ آپ کی ذات تنہامیں ایک انجمن تھی، ان کا مشن ان کے شہزادگان کی شکل میں زندہ رہے گا، ان کی خانقاہ مخدوم ثانی ایک تحریک ہے ایک مشن ہے.
عرس چہلم میں ملک وملت کے نامور اور جید علمانہ غلامانہ وعقیدت مندانہ طریقے سے سیکڑوں کی تعداد میں حاضر ہوئے. اور درجنون مرکزی اداروں کے نمائندگان شرکتسے مشرف ہوئے. خاص کرازہر ہندالجامعۃ الاشرفیہ مبارک پوراعظم گڑھ، دارالعلوم علیمیہ جمدا شاہی بستی، الجامعۃ الاسلامیہ روناہی فیض اباد،دارالعلوم نورالحق چرہ محمد پور، فیض آباد، دارالعلوم اشرفیہ ضیاءالعلوم خیرآباد مئو،دارالعلوم فیض العلوم محمدآباد گوہنہ مئو، دارالعلوم کاملیہ مفتاح العلوم کولھویی بازارمہراج گنج، جامعہ امجدیہ گھوسی مئو،دارالعلوم ضیاء العلوم ھوڑہ کولکاتا،دارالعلوم محبوب یزدانی بسکھاری شریف، دارالعلوم بہارشاہ فیض آباد، جامعہ صوفیہ کچھوچھہ،دارالعلوم مخدوم اشرف اورینٹل کالج کچھوچھہ شریف، جامع اشرف کچھوچھہ شریف، جامعہ اظہارالعلوم نواری، الجامعۃ الاسلامیہ سکٹھی مبارک پور، دارالعلوم ندائے حق جلال پور، دارالعلوم منظر حق ٹانڈہ، دارالعلوم نیازیہ فیض آباد، دارالعلوم منظر اسلام التفات گنجاور مزید تعلیمی ودرسگاہی اداروں کے موقرعلماو مشائخ شریک ہوئے. ان کے علاوہ جن علماکے نام معلوم ہوسکے وہ کچھ اس طرح ہیں.
مولانا ارشاد احمداشرفی بسکھاری، مولانا سرور عالی اشرفی بسکھاری، مونالانامحمد امین خان بسکھاری، مولاناالیاس احمدمصباحی،مولاناصدیق احمد اشرفی بسکھاری،مولاناسید جاوید اشرف بسکھاری، مولاناسید خلیق اشرف اشرفی. بسکھاری،مولانا محمداحمد مصباحی،مبارک پور، مولاناابوذر مصباحی مبارک پور،مولانا مسعود احمد برکاتی مبارک پور، مولاناصدرالوری مصباحی مبارک پور، مولانااخترکمال مصباحی مبارک پور،، مولاناجمال احمد اشرفی خلیفہ پیرطریقت آگرہ، مولاناوفاء المصطفی امجدی ہوڑہ کولکاتا، مولانا قمر احمد اشرفی ممبئی، شاعراسلام قسمت سکندر پوری، سید انیس احمد اشرفی کچھوچھہ، سیدمحمدنورانی میاں کچھوچھہ،سید کمال حسن کچھوچھہ شریف، حضرت سید محمد جیلانی میاں بانی جامعہ صوفیہ کچھوچھہ شریف،سید صلاح الدین اشرف کچھوچھوی، سید محمدعارف میاں کچھوچھوی، سیدنظام اشرف اشرفی جیلانی کچھوچھوی،سید شاہد اشرف اشرفی جیلانی کچھوچھوی،سید خالداشرف اشرفی جیلانی کچھوچھوی،سید حمزہ میاں اشرفی جیلانی کچھوچھوی، سید سبحانی میاں اشرفی جیلانی کچھوچھوی، سید صمدانی میاں اشرفی جیلانی کچھوچھہ شریف،حضرت سید حسینی میاں اشرفی جیلانی کچھوچھوی، سید حسین اشرف اشرفی جیلانی صاحب سجادہ حضرت مخدوم ثانی کچھوچھوی
وغیرہ قابل ذکر ہیں.
خلف اکبر حضرت سیدمحمد اشرف اشرفی جیلانی،والدبزرگوار حضرت سیدریحان اشرف اشرفی جیلانی جانشین حضرت کمیل اشرف علیہ الرحمہ خصوصیت کے ساتھ قابل ذکر ہیں.
صاحب سجادہ جانشین مخدوم ثانی حضرت سید احمد اشرف اشرفی جیلانی مصباحی نے انتہائی پرسوز انداز میں شجرہ خوانی کی.
سید محمد اشرف کچھوچھوی صدرآل انڈیا علماومشائخ بورڈ وچیر. مین ورلڈ صوفی فورم نئی دہلی،نے رقت آمیز انداز میں دعا فرمائی
دہلی کی معروف علمی وادبی شخصیت امیرالقلم ھکرت مولانامقبول احمد سالک مصباحی بانی ومہتمم جامعہ خواجہ قطب الدین بختیار کاکی مریدصادق حضرت پیرسید کمیل اشرف قبلہ علیہ الرحمہ نے حمکہا کہ حضرت خطیب الاسلام کی شخصیت انتہائی جامع الصفات تھی، وہ بیک وقت مختلف علوم وفنون پر کامل دستگاہ رکھتے تھے، علم تفسیروحدیث فقہ اسلامی اورخطابت وارشاد ان کاخاص فن تھا، ہزارون افراد کواپ نے راہ راست پرگامزن فرمایا، مولانامصباحی نے کہاکہ حضرت کی ذات بابرکات خانوادہ اشرفیہ اور جمیع اہل سنت کے لیے نقطہ اتحاد تھی، انھون نے کہا کہ حضرت کے چاہنے والے موجود ہیں، اس لیے اپ کی زسیرت وسوانح پر کام ابھی سے شروع ہوجاناچاہیے، اور الحمد للہ کام شروع بھی ہوچکاہے، انھوں نے اہل قلم سے ایک بیان میں اپیل کرتے ہویے کہا
ملک کے کونے کونے سے ہزارہاافراد انھیں اپنی معلومات کوجلد از جلد تحریری شکل میں منتقل کردینا چاہیے.
کووڈ19کے باوجودخصوصا ممبئی، مہاراشٹرا، گجرات،کرناٹک،گوا، راجستھان، مدھیہ پردیش، یوپی، بہار اوراڑیسہ وبنگال چھتیس گڑھ، جھارکھنڈ، نیپال اور بہت سے افراد بیرون ممالک سے بھی تشریف لائے، پروگرام کی نظامت مولاناعبدالجلیل اشرفی خلیفہ حضرت پیر صاحب علیہ الرحمہ نے انجام دیا.

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ہمارےبارے میں محمد شعیب رضا

محمد شعیب رضا نظامی فیضی ہماری آواز اردو،ہندی ویب پورٹل و میگزین کے بانی و چیف ایڈیٹر ہیں۔ رابطہ نمبر: 09792125987 (ادارہ)

یہ بھی پڑھیں

رئیس التحریر حضرت علامہ یٰس اختر مصباحی صاحب کا جامعہ احسن البرکات مارہرہ شریف میں طلبۂ جامعہ سے فکری اور آفاقی خطاب

مارہرہ شریف: 26مارچ، ہماری آواز(ضیاءالرحمن امجدی) جامعہ احسن البرکات خانقاہ برکاتیہ بڑی سرکار مارہرہ شریف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے